آرٹیکلز پاکستان تازہ ترین

آپ آئیں، آپ حکومت کریں، آپ چیف ایگزیکٹو بن جائیں مولانا فضل الرحمان کی سپریم کورٹ کو دعوت

کراچی(این این آئی)جمعیت علما اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ عمران خان کی وجہ سے پاکستان کی سیاست ناکام ہوگئی ہے۔کراچی میں تقدس حرم نبویﷺ جلسہ عام سے خطاب کر تے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کیا کہ عدالت سے ایک شکوہ کرنا چاہتا ہوں، چیف ایگزیکٹو نے ایف آئی کے افسران کو تبدیل کیا، آپ نے سوموٹو کیوں لیا ؟ کس کے کہنے پر لیا،کیا جلسے میں عمران خان کی تقریر پر اتنا بڑا اقدام لیا گیا؟ آپ آئیں، آپ حکومت کریں، آپ چیف ایگزیکٹو بن جائیں،

عدلیہ کا اپنا کام ہے حکومت کا اپنا کام ہے۔ ۔تفصیلات کے مطابق جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل االرحمن نے سابق وزیر اعظم عمران خان کو فتنہ قرار دیتے ہوئے اعلان کیا کہ وہ عمرانی فتنے کو سمندر برد ہونے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔ مسجد نبوی اور روضہ رسولﷺ کے تقدس کو پامال کرنے والوں کے خلاف فوری طور پر کارروائی ہونے چاہئے ۔ چاہے وہ برطانیہ سے آئے یا پاکستان میں ہو ۔ ہم سب برداشت اور تحمل کا مظاہرہ کرتے ہیں

لیکن جب بات حرمت رسول کی ہو ، وہاں پر صبر وبرداشت اور تحمل کے بندھن بھی ٹوٹ جاتے ہیں ۔ ہم ملکی سلامتی اور بقا کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں ۔ عمران خان کو ہم نے آئینی اور قانونی طریقہ سے ہٹایا ہے ۔ اب وہ غیر قانونی طریقہ سے آنے کی کوشش کر رہا ہے ۔ عمران خان ایک فتنہ ہے ۔ اس فتنے کا قوم مقابلہ کرے ۔ کسی بھی ملک کو تباہ کرنے کے لیے پہلے سیاسی عدم استحکام اور معاشی عدم استحکام پیدا کیا جاتا ہے ۔ نواز شریف کی حکومت کو ہٹا کر ملک میں سیاسی عدم استحکام پیدا کیا گیا ۔

اور عمران خان کو لاکر معاشی طور پر تباہ کر دیا گیا ۔ میں عدالت کا احترام کرتا ہوں ۔ لیکن میں احترام کے ساتھ یہ پوچھنے میں حق بجانب ہوں کہ جلسے میں ہونے والی بات پر ازخود نوٹس کیوں لیا گیا ۔ عدالت قانون اور آئین کے مطابق فیصلے کرے ۔ کسی دباو میں نہ آئے ۔ عدالت کو آئین اور قانون کے مطابق فیصلے کرنے چاہئیں اور یہ فیصلے کس حد تک آئین اور قانون کے مطابق ہیں ، ان کے فیصلوں سے نظر آنا چاہئے ۔ میں پاک فوج کو یقین دلاتا ہوں

کہ جب بھی ملکی سلامتی اور بقا اور سرحدوں کے تحفظ کا مسئلہ آئے گا تو ہمارے یہ کارکن آپ کے ساتھ کھڑے ہوں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کی رات کو پریڈی اسٹریٹ میں مزار قائد کے سامنے تقدس حرمین نبوی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کانفرنس سے جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی سیکرٹری جنرل سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری ،

سندھ کے سیکرٹری جنرل مولانا راشد محمود سومرو ، مولانا عبدالکریم عابد ، سابق صدر آصف علی زرداری کے پولیٹکل سیکرٹری ڈاکٹر عبدالقیوم سومرو ، اسلم غوری ، قاری محمد عثمان ، مولانا محمد غیاث ، مفتی اعجاز مصطفی ، عالمی مجلس ختم نبوت کے رہنما قاضی احسان ، مولانا سمیع الحق سواتی ، مولانا عمر صادق ، مولانا عبداللہ سومرانی ، قاری فیض الرحمن عابد ، مولانا فتح اللہ ضلع شرقی کے

رہنما ،ضلع جنوبی کے امیر عبداللہ بلوچ ،نعت خواں حسان احسانی ،تاج محمد نایو،ضلع لاڑکانہ کے امیر علامہ ناصر خالد محمود سومرو ،بابر قمر عالم مولانا رشید نعمانی ، مولانا ڈاکٹر نصیر الدین ، مولانا حما د اللہ شاہ ، مولانا احسان اللہ ٹکروی اور دیگر نے خطاب کیا ۔اس موقع پر سابق صدر آصف علی زرداری کے سابق مشیر اور سابق صوبائی مشیر مذہبی امور ڈاکٹر عبدالقیوم سومرو نے

جمعیت علمائے اسلام میں شمولیت کا اعلان کیا ۔ جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ جب اسرائیل نے فلسطین پر جارحیت کی تو اہل کراچی نے فلسطینی مسلمانوں سے بھرپور اظہار یکجہتی اسی مقام پر کی تھی ، جہاں ہم کھڑے ہیں ۔ کچھ لوگ اسرائیل کو تسلیم کرنے کی بات کر رہے تھے لیکن آپ کی آواز اور دب دبہ نے ان لوگوں کو ایسا نہ کرنے پر مجبور کیا ۔

آج نے یہودی لابی کے ایجنٹوں نے مسجد نبوی کی بے حرمتی کی ۔ انہوں نے کہا کہ جو بھی حرمین شریفین کے تقدس کو پامال کرنے کی کوشش کرے گا ، اسے عبرت ناک سزا دی جائے گی ۔ جب یہودیوں نے مدینہ منورہ کی توہین کی تو اللہ کے نبی ﷺ نے حکم دیا کہ ان کو عرب سے نکال دو ۔ یہودی ایجنٹوں نے اگر پاکستان میں حرم نبوی کے تقدس کو پامال کرنے کی سازش کی تو

مسلمانان پاکستان سمندر میں غرق کر دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ مکہ والوں نے بھی حضور ﷺ کو لاوارث کہا تھا ۔ مگر اللہ تعالی نے رسولﷺ کو ایسی قیامت تک ایسی امت عطا کی ہے جو حرمت رسولﷺ پر اپنی جان قربان کرنے کے لیے تیار ہے ۔ ایک ارب سے زیادہ مسلمان ناموس رسالت پر اپنی جانوں کو قربان کرنے کے لیے تیار ہیں ۔ آئندہ کسی نے حرمین کی توہین کی کوشش کی تو انہیں مسلمان معاف نہیں کریں گے ۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ ہم تحمل اور برداشت والے لوگ ہیں ۔ ہر مشکل کو تحمل اور برداشت سے عبور کیا ہے ۔ مگر حرمت رسول پر صبر و تحمل اور برداشت کو بندھن ٹوٹ جاتا ہے ۔ عمران خان سن لو تمہیں امریکا ، برطانیہ اور یہودیوں نے آسمان پر چڑھا دیا ۔ اور نئے نئے القابات دیئے ۔ اچھا ہوا کہ تو اقتدار میں آیا ۔ تمہاری قابلیت و اہلیت کھل کر سامنے آ گئی ۔ اس میں بھی اللہ کی حکمت ہے ۔

کارکردگی کے لحاظ سے ناکام اور نااہل ثابت ہوئے اور آج اپنی ذہنی اور دماغی بیماری کا اظہار کر رہا ہے ۔ عمران خان تمہاری وجہ سے دنیا بھر میں پاکستان کی سیاست اور اخلاقیات بدنام ہو گئی ہے ۔ انہوں نے لوگوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان ایک فتنہ ہے اور میں تمہیں متنبہ کرنا چاہتا ہوں جہاں یہ نااہل اور ناکام ہے ، وہی ایک فتنہ بھی ہے ۔ اور اس کے ماننے والے اس پر اندھی تقلید کرتے ہیں ۔

اپنا کمنٹ کریں